Israeli airstrikes intensify after fruitless UN Security Council meeting

غزہ میں ہلاکتوں کی تعداد 200 کے قریب ہونے کے ساتھ ہی اسرائیل نے حملوں میں تیزی کر دی

اسرائیل کے نگراں وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو کے" دشمنیوں کا خاتمہ قریب آنا نہیں ہے" کہنے کے کچھ گھنٹوں بعد ہی اسرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی پر پیر کے اوائل میں نئے حملے شروع کیے تھے۔

اتوار کو حملوں کے نتیجے میں کم از کم 42 فلسطینی شہید ، درجنوں زخمی اور کم سے کم دو رہائشی عمارتوں کو تباہ کرنے کے بعد غزہ پر اسرائیل کی بمباری مسلسل آٹھویں دن میں داخل ہوگئی۔

ذرائع ابلاغ کے مطابق ، غزہ کے حماس کے سربراہ یحییٰ السنور کے گھر کو بھی نشانہ بنایا گیا۔

غزہ کی پٹی میں گذشتہ پیر سے تازہ ترین تشدد کے بعد سے کم از کم 192 افراد شہید ہوگئے ہیں ، جن میں 58 بچے اور 34 خواتین شامل ہیں۔جبکہ حماس کے جوابی حملوں میں اسرائیلی 10 افراد کی ہلاکت کی اطلاع ہے۔

پیر کی صبح کم از کم 55 اسرائیلی فضائی حملے کیے گئے

اسرائیلی لڑاکا طیاروں نے پیر کے روز علی الصبح غزہ پر کم سے کم 55 فضائی حملے کیے۔ اسے الجزیرہ کے صفوت الکلحوت نے رپورٹ کیا۔

الکاہلوٹ نے کہا کہ ان اہداف میں فلسطینی سرزمین کے متعدد فوجی اور حفاظتی اڈے نیز غزہ شہر کے مشرق میں کچھ خالی زمین بھی شامل ہیں۔

غزہ سٹی کے وسط میں ایک چار منزلہ عمارت پر بھی بمباری کی گئی تھی ، لیکن ابتدائی اطلاعات کے مطابق اس عمارت کو حملے سے پہلے ہی خالی کر لیا گیا تھا۔

انہوں نے کہا ، "یہ آگ فوجی اڈوں ، سیکیورٹی اڈوں ، خالی اور خالی کیے جانے والے تربیتی کیمپوں پر شدت اختیار کر رہی ہے جن کا تعلق فلسطینی جنگجو گروپوں سے ہے۔"

مزید تفصیلات۔۔

  1. اسرائیل کی وزارت دفاع غزہ کی امداد میں حماس کو نظرانداز کرنے کی خواہاں ہے
  2. حماس کا کہنا ہے کہ اگر اسرائیل نے حملہ کیا تو وہ لڑائی دوبارہ شروع کرنے کے لئے تیار ہے


2 comments:

  1. It is so sad to see what is happening with Muslims. I Hope this cruelty ends soon.

    ReplyDelete
    Replies
    1. With your hope it's ended up for now stay tuned for updates. we barley collected news with full reference and confirmation.

      Delete